کراچی میں امام بارگاہ پر دہشت گردانہ حملے میں 13 سالہ بچہ شہید ، 20 افراد زخمی

کراچی میں امام بارگاہ پر دہشت گردانہ حملے میں 13 سالہ بچہ شہید ، 20 افراد زخمی

پاکستان کے صوبہ سندھ کے دارالحکومت کراچی میں ایک امام بارگاہ پر کریکر سے کیے جانے والے حملے میں ایک بچہ شہید جبکہ 20 افراد زخمی ہو گئے ہیں۔
کراچی پولیس کے مطابق نامعلوم حملہ آوروں نے شریف آباد تھانے کی حدود میں واقع درِ عباس امام بارگاہ کو کریکر کے ذریعے نشانہ بنایا۔
حملے کے نتیجے میں ایک 13 سالہ بچہ ہلاک جبکہ خواتین اور بچوں سمیت 18 افراد زخمی ہوئے جنھیں عباسی شہید ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔
پولیس کے مطابق مرنے والے لڑکے کا نام فراز تھا۔ علاقے کے تھانیدار امیر منہاس نے بی بی سی کو بتایا کہ کریکر حملے کے وقت امام بارگاہ میں خواتین کی مجلس ہورہی تھی۔
انھوں نے مزید بتایا کہ مجلس کی انتظامیہ نے پولیس کو اس مجلس کے بارے میں کوئی پیشگی اطلاع نہیں دی تھی۔ انھوں نے مزید بتایا کہ عاشورہ محرم کے بعد امام بارگاہوں پر سیکیورٹی میں ویسے بھی کمی کی جاتی ہے۔
ایس ایچ او امیر منہاس نے مزید بتایا کہ یہ ایک گھریلو ساخت کا کریکر تھا جس وزن آدھے سے پونے کلوگرام کے درمیان ہونے کا اندازہ لگایا گیا ہے۔
صوبہ سندھ کے آئی جی اے ڈی خواجہ نے اس واقعہ کو نوٹس لیتے ہوئے متعلقہ ڈی آئی جو کو اس بارے میں فوری رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

مقالات ذات صله

الرد

لن يتم نشر عنوان بريدك الإلكتروني. الحقول الإلزامية مشار إليها بـ *