مشن

ہر زمانے کا سب سے بڑا ہتھیار میڈیا رہا ہے مگر بد قسمتی سے ملت جعفریہ پاکستان کے پاس ایسا کوئی بھی مؤثر پلیٹ فارم نہیں تھا جو قوم کی آواز بن کر دشمن کے پراپیگنڈے کا جواب دے سکے اور اپنا پیغام پوری دنیا میں بسنے والے شیعان حیدر کرار تک پہنچا سکتے ۔۔۔
المہدی ٹی وی کو مندرجہ ذیل مقاصد کی تکمیل کے لیے لانچ کیا گیا ہے۔

مظلوموں کی آواز

المہدی ٹی وی ایک ایسا پلیٹ فارم ہے جو مظلوموں کی آواز دنیا تک پہنچانے اور ان کو انصاف دلانے کے لیے بھی کوشاں ہے۔ مثـلآ
افغانستان سے تعلق رکھنے والے 16 سالہ شیعہ ہزارہ علی جمعہ جو ایک اکسیڈنٹ کے بعد کینسر میں مبتلا ہو گئے تھے مگر پاکستان میں ان کو زبان نہ جاننے ، وسائل نہ ہونے کی وجہ سے شدید مشکلات کا سامنہ تھا

مگر ہماری کچھ کوشش اور المہدی ٹی وی کی صرف ایک رپورٹ سے نہ صرف اُس بچے کے اپریشن کے پیسے جمع ہوئے بلکہ 6 مہینے تک کینسر کا علاج اور دیگر اخراجات کا بھی انتظام ہو گیا جو کہ لاکھوں میں تھا ۔۔۔

ملت جعفریہ درد دل رکھنے والی عظیم قوم ہے ضرورت صرف اُسے درست حالات سے باخبر کرنے کی ہے
المہدی ٹی وی کی پوری ٹیم ان مومنین و مومنات کو سلام پیش کرتی ہے ۔ جو ایسے پروجیکٹس میں المہدی ٹی وی کا ساتھ دیتےہیں ، آپ کی توجہ اور ہمدردی سےنہ صرف اس معصوم بچے کی جان بچ گئی بلکہ اس کے چہرے پر مسکراہٹ بھی دیدنی تھی۔

 

بین الاقوامی کوریج


المہدی ٹی وی نے نہ صرف جلوس عزا اور عزاداری کو 22 سے زیادہ ممالک سے کور کیا بلکہ حالیہ واقعات جیسے نائجیریہ میں شیعہ نسل کشی یا سعودی عرب میں آیت اللہ باقر النمر کی شہادت پر المہدی ٹی وی نے پوری دنیا میں ہونے والے احتجاج کو کور کیا اور مستند ڈاکومینٹریز بنائیں

اسلامک موومینٹ آف نائجیریہ اور آیت اللہ باقر النمر کی فیملی کی طرف سے افیشلی المہدی ٹی وی کا شکریہ ادا کیا گیا

آپ المہدی ٹی وی کی کوریج کا اندازہ اس سے لگا سکتے ہیں کہ
جب نائجیریہ میں ایک ہزار سے زیادہ اہل تشیع کو قتل کر دیا گیا تھا لاشوں کی بے حرمتی کی گئی ان کے مال و اسباب کو لوٹ لیا گیا اور اسلامک موومینٹ آف نائیجیریہ کے بانی ایت اللہ شیخ ابراہیم زکزکی کو چھ گولیا مار کر گرفتار کر لیا گیا تھا اور کہ بہت سے فیملی میمبرز کو زندہ جلا دیا گیا تھا

تو المہدی ٹی وی اُ س وقت بھی آپ کی فیملی اور اسلامک موومینٹ آف نائجیریا کا موقف بھرپور انداز سے دنیا تک پہنچانے کا ذریعہ تھا ۔

المہدی ٹی وی نے اُن حالات میں شیخ ابراہیم زکزکی کی اُس بیٹی صوہالے ابراہیم زکزکی کا انٹرویو کیا جن کو بھی گرفتار کر لیا گیا تھا اور تشدُد کے بعد رہا کیا گیا حالہ کہ وہ اس سب کی عینی شاہد تھی مگر ان کا کسی بھی چینل کو دیا جانے والا صرف یہی انٹرویو ہے۔


اور جس نیجیرا میں قتل عام جاری تھا تو پہلا احتجاج جو لندن میں نائجیرین امبیسی کے باہر رات 12 سے 3 بجے تک ہوا وہ بھی المہدی ٹی وی نے کور کیا اور اس کے بعد پوری دنیا سے احتجاج کو کور کرنے کا سلسلہ جاری رہا المہدی ٹی وی ایسا بھی واحد چینل تھا جس کے نماعندوں نے نیجیرا میں ہونے والے احتجاج کو بھی نیجیرا کے مختلف شہروں سے کور کیا ۔


بے بنیاد پراپوگنڈے کا رد


المہدی ٹی وی کا مقصد ملت جعفریہ کو حالات حاضرہ سے آگاہ کرنا اور ملت کے خلاف مخالف میڈیا کے بے بنیاد پراپیگنڈے کو دلائل کے ساتھ رد کرنا اور اس سے اپنی قوم کو اگاہ کرنا شامل ہے۔
مثـلآ

پاکستان کے ایک نجی چینل کے ایک متبصں اینکر کی جانب سےشہید آیت اللہ باقر النمر کی توہین من گھڑت الزامات اورایران کے خلاف بے بنیاد پراپیگنڈے پر جب المہدی ٹی وی نے قوم کو اگاہ کیا ۔
چینل نے معافی مانگی اور پیمرا نے بھی اینکر کے خلاف ایکشن لیا مگر اینکر معافی مانگنے کی بجائے ملت کے ان جوانوں کو دھمکیاں دینے
لگا جو اُس کے خلاف احتجاج میں شریک تھے تو پھر المہدی ٹی وی نےباقاعدہ رپورٹ بنانے کی ضرورت محسوس کی ۔

عزاداری سیدالشہدا کا فروغ


عزاداریٔ سید الشہداء، ہماری شہ رگ ہے۔ اس کے فروغ اور نشرو اشاعت کے لیے باقاعدہ ایک شعبہ ‘‘ المہدی عزاداری’’ کے نام سے بنایا گیا ہے۔

  1. دنیا بھر کی امام بارگاہوں اور ان کے بانیان کے انٹرویوز بھی کیے جا رہے ہیں۔ تاکہ ان عظیم ہستیوں کی آوازوں، ان کے کردار اور ان کے کارناموں کو ہمیشہ ہمیشہ کے لیے ویڈیو فارم میں محفوظ کیا جا سکے۔
  2. ایسے نوحہ خوان جنہیں پروردگار نے پُر درد آواز سے تو نوازا ہے لیکن ان کے پاس اتنے مالی وسائل نہیں کہ اپنی آواز کو دنیا بھر کے مومنین و مومنات تک پہنچا سکیں۔ المہدی ٹی وی ایسے نوحہ خوانوں کے نوحوں کی ریکارڈنگ اور پبلیشنگ قربۃً الی اللہ کرتا ہے۔
  3. جید علماء کرام خصوصًا وہ علماء جو اس وقت ہم میں موجود نہیں کی مجالس و محافل کو مومنین و مومنین تک پہنچانے کا بھی اہتمام کیا جاتاہے۔ مثـلآ
پچھلے ہر سال المہدی ٹی وی کچھ نوحہ خوانوں کی بلکل فری رکارڈینگ اڈیٹنگ اور پبلشینگ کرتا ہے ۔جبکہ تاریخ عزادار ی کے حوالے سے پاکستان ، ڈنمارک ، برتانیہ ، ہالینڈ ، سائپرس سمیت مختلف ممالک سے امام بارگاہوں کی ڈاکومینٹریز بنائی جا چکی ہیں ۔

مذہبی تعلیمی منصوبہ ‘‘مصباح الدجی یونیورسٹی’’


یمن میں تقریبا 80 سے 90 لاکھ اہل تشیع کی تعداد ہے۔ سعودی عرب 17 ممالک کے اتحاد کے ساتھ دنیا کا جدید ترین اسلحہ استعمال کرتے ہوئے سوائے اپنے آپ کو دیوالیہ کرنے کے یمن میں کوئی قابل ذکر کامیابی حاصل نہیں کر سکا۔ پہلے بھی یمن کے خلاف 4 جنگیں لڑ چکا ہے مگر ایک بھی نہیں جیتی۔
لبنان میں صرف 10 سے 15 لاکھ اہل تشیع کی تعداد ہے مگر لبنانی تنظیم حزب اللہ کو بین الاقوامی طاقت تسلیم کیا جاتا ہے۔
جبکہ پاکستان میں شیعہ کی تعداد 4 سے 5 کروڈ ہے اور صورت حال اتنی عجیب ہے کہ صرف شیعہ ہونے کے جرم میں قتل عام کیا جاتا ہے اور بعد میں فخریہ انداز سے ذمہ داری بھی قبول کی جاتی ہے۔ آخر ایسا کیوں ہے؟
شاید ہماری حالت ایک Crowd کی سی ہے۔ ابھی تک ہم ایک منظم قوم بنے ہی نہیں۔ بجائے اس کے کہ ہم اپنی اس حالت زار پر تدبّر و تفکّر کریں ہم میں اب بھی تقسیم در تقسیم کا عمل جاری ہے۔
بلاشبہ قوم میں کسی حد تک تعمیری کام تو ہو رہا ہے لیکن بہت کچھ کرنا ابھی باقی ہے!
ہماری نظر میں ایران، لبنان اور یمن کے شیعان حیدر کرار کے دنیا میں بلند مقام کا راز یہی ہے کہ ان کے علماء نے اپنی اپنی قوم کی بنیادی مذہبی تعلیم پر کام کیا۔
مگر ہماری حالت تو یہ ہے کہ

پاکستان میں تقریباً 90 فیصد سے زیادہ شیعہ بچے قرآن مجید اور ابتدائی دینی معلومات اہل تشیع کی بجائے غیروں سے حاصل کر رہے ہیں۔ نہ ہی ملت کے پاس کوئی ایسا مذہبی تعلیمی منصوبہ ہے کہ ہمارے پروفیشنلز اور دیگر شخصیات اپنی مصروفیات کے ساتھ ساتھ دینی تعلیم کو بھی حاصل کر سکیں۔۔

کہ جس قوم کے اکثر بچے اور بچیاں قرآن مجید اور مسائل دینیہ کی بنیادی تعلیم بھی مکتب تشیع کے علاوہ غیروں سے حاصل کررہے ہوں ان سے کیسے توقع کی جاسکتی ہے کہ وہ ملت جعفریہ میں قابل ذکر کردار ادا کریں گے۔
ولایت حضرت علی علیہ السلام، فلسفۂ حسینیت اور معرفت امام زمانہ علیہ السلام جیسے عظیم مقاصد کے حصول کے لیے
الحمد للہ مصبَاحُ الدُّجٰی یونیورسٹی کا قیام عمل میں لایا گیا ہے۔ اب تک دنیا بھر سے ہزاروں مومنین و مومنات استفادہ کر چکے ہیں اور سینکڑوں زیر تعلیم ہیں۔
المہدی ٹی وی کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ یونیورسٹی کے قرآن، حدیث، صرف و نحو کے عربی، فارسی انگلش اور اردو جت لیکچرز کو جدید ٹکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے دنیا بھر میں مومنین و مومنات تک بالکل فری پہنچا رہا ہے۔

یعنی آپ المہدی ٹی وی سے بنیادی تجوید و قرأت سے لے کر عالم اور عالمہ کے کورسز دنیا بھر سے گھر بیٹھے بالکل فری کر سکتے ہیں۔ مصباح الدجی یونیورسٹی کے سٹوڈنٹنس ہونے کی کے بائس حوزہ ھائے علمیہ ایران ، عراق اور شام میں داخلے کے مواقعوں سے بھی فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔

تاریخی واقعات اور موضوعات پر مبنی ڈاکومینٹریز


اسلامی واقعات سے بچوں کو روشناس کروانے کے لیے مختلف تاریخی واقعات جیسے جنگ خیبر، غدیر یا مباہلہ اور موضوعات جیسے وضوء ، نماز ،ماتم اور کلمہ پر مبنی ڈاکومنٹریز مستند کتب اور تاریخی حقائق کی روشنی میں بنانے اور انہیں نشر کرنے کا اعزاز بھی المہدی ٹی وی کو حاصل ہے۔

اتحاد بین المومنین


المہدی ٹی وی قوم کے مکمل اتحاد پر یقین رکھتا ہے اور کسی بھی اندرونی اختلاف اور گروپ کا حصہ بننے کی بجائے ملت کی بہتری کے لیے کام کرنے والے ہر فرد اور ادارے کو قدر کی نگاہ سے دیکھتا ہے اور کوریج دینے کی کوشش کرتا ہے

یہی وجہ ہے کہ شہید علامہ ناصر عباس آف ملتان یا سپاہ محمد کے سلار اعٰلی علامہ غلام رضا نقوی سمیت بہت سے افراد کی زندگی کے بارے میں تفصیلی انٹرویو کا اعزاز صرف المہدی ٹی وی کو حاصل ہے

جدید ٹیکنالوجی کا استعمال

المہدی ٹی وی نے پروگرامز کی کوریج کے روائتی انداز کو اپنانے کی بجائے بین الاقوامی چینلز کی طرح جدید گریفکس اور تھری ڈی ٹیکنالوجی کا استعمال کیا اور کئی مواقعوں پر ڈرون سے بھی کوریج کی

برطانیہ کے مرکزی جلوس اربعین کی کوریج کے لیے یوں تو نیشنل اور انٹرنیشنل میڈیا کی بڑی تعداد تھی مگر المہدی ٹی وی ایسا واحد چینل تھا جس نے ڈرون سے بھی کوریج کی

اتحاد بین المسلیمین


یہ اعزاز بھی صرف المہدی ٹی وی کو ہی حاصل ہے کہ نہ صرف اہل تشیع بلکہ اہل تسنن بھی المہدی ٹی وی کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔

منہاج القران لندن کی جانب سے المہدی ٹی وی کی اتحاد بین المسلمین کوششوں کو سراہا گیا اور کامیابی کے لیے دعا فرمائی گئی ۔۔۔
برطانیہ میں اہل سنت کی محافل اور دیگر پروگرامز میں المہدی ٹی وی کی ٹیم کا شاندار استقبال کیا جاتا ہے ۔۔۔


المہدی ٹی وی نے ولنٹیرز کی ٹرینگ اور میمبرشپ کا آغاز کیا ہے اگر آپ بھی اس کا حصہ بننا چاہیں تو یہ پلیٹ فارم آپ کے لیےحاضر ہے۔
یعنی المہدی ٹی وی میں شمولیت کے لیے صرف آپ کے خلوص اور مشن کے ساتھ مخلص ہونے کی ضرورت ہے اور اگر آپ المہدی ٹی وی کو رپورٹر ، ویڈیو اڈیٹر یا کسی بھی شعبے میں شامل ہونا چاہیں تو ٹرینگ کا بھی اہتمام کیا جائے گا مگر سب ٹیم میمبرز کے لیے میمبر شپ لازمی ہے
یہ صدی حضرت امام زمانہ علیہ السلام کی صدی ہے ۔ آئیں سب مل کر ، استغاثۂ حسینی ھل من ناصر ینصرنا پر لبیک کہتے ہوئے المہدی ٹی وی کی مضبوط اور مدلل آواز کو عظیم سے عظیم تر بنانے میں اپنا اپنا کردار ادا کریں۔